Thursday, May 30, 2024
Homesliderبنگال میں کسی بھی صورت میں سی اے اے نافذ نہیں ہوگا...

بنگال میں کسی بھی صورت میں سی اے اے نافذ نہیں ہوگا : ممتا بنرجی

- Advertisement -
- Advertisement -

کولکتہ ۔ مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی نے آج بی جے پی کی شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ گجرات اسمبلی انتخابات کے پیش نظر شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے ) اور نیشنل رجسٹر آف سٹیزن (این آر سی) کابی جے پی استعمال کررہی ہے ۔اس کے ساتھ ہی انہو ں نے کہا کہ بنگال میں کسی بھی صورت میں شہریت ترمیمی ایکٹ کے نفاذ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی ریاست کو تقسیم کرنے کی کوشش کررہی ہے اور علیحدگی پسندی کو ہوا دینے کی کوشش کررہی ہے ۔ممتا بنرجی نے اس بات کا اعادہ کیا کہ وہ کبھی بھی ریاست کی تقسیم کی اجازت نہیں دیں گی۔ ممتا بنرجی نے کہاکہ جب بھی الیکشن قریب آتا ہے بی جے پی سی اے اے اور این آر سی کو نافذ کرنے کی بات کرنے لگتی ہے ۔چوں کہ اس سال کے اواخر میں گجرات میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں اور ڈیڑھ سال بعد لوک سبھا انتخابات ہونے والے ہیں اس لئے ایک بار پھر شہریت ترمیمی ایکٹ کے نفاذ کا مسئلہ اٹھایا جارہا ہے ۔
کرشنا نگر میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی فیصلہ کرے گی کہ کون شہری ہے اور کون نہیں؟ متوا سماج کے تمام افراد اس اس ملک کے شہری ہیں۔ بنگلہ دیش سے آنے والی کمیونیٹی شمالی 24 پرگنہ اور ندیا ضلع میں پھیلے ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ بی جے پی ریاست کے شمالی حصوں میں راج بنشیوں اور گورکھوں کو بھڑکاکر کر مغربی بنگال میں علیحدگی پسندی کو ہوا دے رہی ہے ۔ ہم کبھی بھی مغربی بنگال کی تقسیم کی اجازت نہیں دیں گے ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی 2024 کے لوک سبھا انتخابات کے بعد اقتدار میں واپس نہیں آئے گی۔ بنرجی نے کہا کہ 2019 میں ملک کی سیاسی صورتحال مختلف تھی اور اب تبدیل ہوچکی ہے ۔ 2019 میں بی جے پی بہار، جھارکھنڈ اور دیگرکئی ریاستوں میں برسراقتدار تھی، لیکن اب اس کی سیاسی موجودگی پورے ملک میں کم ہوگئی ہے ۔ اب وہ کئی ریاستوں میں اقتدار میں نہیں ہے