Tuesday, May 28, 2024
Homesliderطلبہ کےلئے بیرون ممالک تعلیم اب پہلی پسند نہیں

طلبہ کےلئے بیرون ممالک تعلیم اب پہلی پسند نہیں

- Advertisement -
- Advertisement -

نئی دہلی: بہت سارے طلبہ اس سال کورونا وائرس کی وجہ سے بیرون ملک تعلیم حاصل کرنے کے اپنے منصوبوں میں تبدیلی یا تاخیر کررہے ہیں۔ امریکہ، برطانیہ، کینیڈا اور یوروپ کا رخ کرنے سے پہلے اس وبائی مرض کورونا کی  صورتحال کا قریب سے جائزہ لے  رہے ہیں۔ اس سال ، کورونا وائرس وبائی مرض کی بدولت بیرون ملک مقیم میڈیکل تعلیم حاصل کرنے کے خواہشمند طلبہ کی تعداد میں 70 فیصد سے زیادہ کی کمی واقع ہوئی ہے۔

تاہم  کچھ طلبہ  جو کسی بھی قیمت پر ڈاکٹر بننا چاہتے ہیں ، کوویڈ -19 کی بیرون ملک صورتحال کم ہونے کے بعد اپنی تعلیمی خواہش کو آگے بڑھانے کے لئے انتظار اور نگاہ رکھنے کا رویہ اپنائے ہوئے ہیں۔ کچھ طلبہ کو NEET امتحان میں اپنی کارکردگی پر واضح تصویر ملی ، جس کا نتیجہ حال ہی میں جاری کیا گیا۔ انہیں لگتا ہے کہ وہ کنوینر کوٹے کے تحت نشست حاصل نہیں کر پائیں گے  لیکن موجودہ حالات میں ڈاکٹر بننے کے لئے بیرون ملک سفر کرنے کو تیار نہیں ہیں۔

چونکہ بیرون ملک سفر کرنے کے معاملے میں اب بھی حالات بہتر نہیں  ہیں لہذا بہت سارے طلبہ کا خیال ہے کہ اگلے سال ہونے والے NEET امتحانات کی تیاری کریں، لیکن کچھ دوسرے افراد دوسرے ممالک میں تعلیم ، ماحولیات ، ماہرین تعلیم اور دیگر پہلوؤں سے متعلق تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ سے مشورہ کر رہے ہیں۔ کچھ دوسرے لوگ آن لائن اسباق سیکھنا چاہتے ہیں اور دوسرے ممالک کا سفر کرنے کے لئے تیاری میں  ہیں ۔

تعلیم کے حصول کے لئے دنیا کی سب سے پسندیدہ منزلوں میں چین ، یوکرین ، فلپا ئن ، روس ، ہنگری ، بلغا ریا ، کیریبین جزیرے ، اور دیگرممالک ہیں۔ سالانہ  20 ہزار سے زیادہ طلبہ ان مقامات پر سفر کرتے ہیں۔ کم از کم 3ہزار طلبہ ان مقامات سے ایم بی بی ایس کرتے ہیں۔خانگی کالجوں میں ایم بی بی ایس مکمل کرنے میں کم از کم 75 سے 85 لاکھ روپے لاگت آتی ہے جبکہ  دوسرے ممالک میں اس تعلیم پر  25 لاکھ سے 35 لاکھ روپے تک کے ہی مصارف برداشت کرنے پڑتے ہیں  ۔ ابراڈ منیجنگ ڈائریکٹر ڈاکٹر ستیش نے کہا ہے  کہ بہت کم طلبہ بیرون ملک ایم بی بی ایس میں داخلے کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لئے ان کی تنظیم سے رابطہ کر رہے ہیں۔ جب تک کوویڈ وبائی مرض اپنے پیمانے اور شدت میں کم نہیں ہوتا ہے طلبہ اس میدان میں  آگے نہیں آئیں گے ۔