Saturday, June 22, 2024
Homesliderکے سی آر کی مودی کو دھمکی ، 24 گھنٹوں میں دھان...

کے سی آر کی مودی کو دھمکی ، 24 گھنٹوں میں دھان کے مسئلہ پر جواب دینے کا مطالبہ

- Advertisement -
- Advertisement -

نئی دہلی ۔ مرکزی حکومت کی دھان کی خریداری کی پالیسی کے خلاف احتجاج کو تیز کرتے ہوئے تلنگانہ کے چیف منسٹر  کے چندر شیکھر راؤ نے وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت کو تلنگانہ  سے دھان کی خریداری پر جواب دینے کے لیے 24 گھنٹے کا وقت دیا ہے۔کے سی آر نے دھمکی دی کہ اگر مرکزی حکومت نے جواب نہیں دیا تو وہ ملک بھر میں احتجاج کریں گے۔کے سی آر نے تلنگانہ راشٹرا سمیتی (ٹی آر ایس) کے قائدین کے ساتھ یہاں تلنگانہ بھون میں دھرنا دیا اور وزیر اعظم نریندر مودی کو انتباہ دیتے ہوئے کہا، ہمارے کسانوں کے جذبات سے مت کھیلو، ان کے پاس طاقت ہے وہ حکومت گراسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کسان بھکاری نہیں ہیں اور انہیں اپنی پیداوار کے لیے کم از کم امدادی قیمت (ایم ایس پی) کا مطالبہ کرنے کا حق ہے۔
کے سی آر نے کہا میں مودی جی اور (صارفین کے امور، خوراک اور عوامی تقسیم کے وزیر پیوش) گوئل جی سے ہاتھ جوڑ کر درخواست کرتا ہوں کہ وہ 24 گھنٹے کے اندر دھان کی خریداری پر ریاست کے مطالبے کا جواب دیں۔ اس کے بعد ہم کوئی فیصلہ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر مرکز نے جواب نہیں دیا تو ملک بھر میں مظاہرے تیز کیے جائیں گے۔بھارتیہ کسان یونین کے لیڈر راکیش ٹکیت نے بھی یہاں ایک روزہ دھرنے میں کے سی آر کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔
سال 2014 میں تلنگانہ میں اقتدار میں آنے کے بعد دہلی میں ٹی آر ایس کی یہ پہلی احتجاجی ریلی ہے۔ پارٹی کے ایم پی، ایم ایل ایز اور تمام کابینہ وزیر دھرنے پر بیٹھ گئے۔
تلنگانہ حکومت نے مرکز سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ موجودہ ربیع سیزن میں ریاست سے اسنا (سیلا) چاول خریدے، لیکن مرکز نے کہا ہے کہ وہ صرف کچے چاول خرید سکتی ہے اور وہ اس چاول کو نہیں خرید سکتی، کیونکہ اس کا بازار میں بڑا حصہ ہے۔